القدس میں یہودیوں کے لیے 942 گھروں کی تعمیر کا منصوبہ

القدس میں یہودیوں کے لیے 942 گھروں کی تعمیر کا منصوبہ
settlements-newمقبوضہ بیت المقدس(مرکز اطلاعات فلسطین) مقبوضہ بیت المقدس کی صہیونی بلدیہ کی پلاننگ اینڈ بلڈنگ کمیٹی کے ذرائع کے حالیہ انکشاف کے مطابق القدس کی جنوبی یہودی بستی ’’گیلو‘‘ میں 942 نئے رہائشی یونٹس تعمیر کرنے کا منصوبہ بندی کرلی گئی ہے۔

اسرائیلی اخبار ’’یدیعوت احرونوت‘‘ کی ویب سائٹ کے مطابق منصوبے میں 88 مربع کلومیٹر اراضی استعمال کی جائے گی جس میں ایک کلومیٹر تجارت 20 کلومیٹر عام تعمیرات اور ساڑھے تین کلومیٹر تفریح اور اسپورٹس کے لیے مختص کیے جائیں گے۔ منصوبے کے مطابق 300 رہائشی یونٹس تعمیر کیے جائیں گے۔
ریڈیو نے کمیٹی کے سربراہ کوبی کحلون کے حوالے سے بتایا کہ یہ منصوبہ جنوری میں پیش کیا گیا تھا تاہم بعض ترامیم کے لیے اسے موخر کردیا گیا تھا۔
اسرائیلی بلدیہ کے کے مطابق خاص ملکیتی اراضی پر تعمیرات کی منصوبہ بندی کی جا رہی ہے ان زمینوں کے مالکان نے خود اپنی اراضی کو اس ھیکلی منصوبے کے لیے پیش کیا ہے جس کی قانون اجازت دیتا ہے۔
دوسری جانب اسرائیلی روزنامے ’’ھارٹز‘‘ نے انکشاف کیا ہے کہ مقبوضہ بیت المقدس کے جنوب میں نئی یہودی کالونی کی تعمیر کے لیے دو ہفتے بعد بحث شروع ہو جائے گی اس کالونی میں 1608 گھر تعمیر کر کے ان میں یہودیوں کو بسایا جائے گا۔

آپ کی رائے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

مزید دیکهیں